بہارپٹنہ

پورے بہارمیں سولر پاور کا استعمال ہو:وزیر اعلیٰ

پٹنہ:وزیراعلیٰ جناب نتیش کمار نے مغربی چمپارن ضلع کے رام نگر بلاک کے تحت بنکٹوا پنچایت کے چمپا پور گائوں کا دورہ کیا۔دورہ کے دوران وزیر اعلیٰ بجلی سے متعلق عزم منصوبہ کے تحت آف گرڈ (سور پاور)کے توسط سے پہچائی گئی ہر گھر بجلی منصوبہ کاوزیر اعلیٰ نے جائزہ لیا ۔وزیر اعلیٰ بجلی سے متعلق عزم منصوبہ کے تحت ہر گھر بجلی منصوبہ کے توسط سے قائم 20کیلو واٹ صلاحیت والے منی گرڈ پلانٹ کی وزیر اعلیٰ نے نقاب کشائی کی ۔ 20کیلو کے اس منی گرڈ پلانٹ سے 121 کنبے کو فائدہ پہنچایا گیاہے ۔ اس کے بعد چمپا پور گائوں کا دورہ کر ہر گھر بجلی منصوبہ کا وزیر اعلیٰ نے جائزہ لیا ۔ چمپا پور گائوںمیں ہر گھر بجلی منصوبہ کا جائزہ لینے کے دوران محترمہ اتوریا دیوین ، جناب گورکھ ارائوں ، محترمہ چنڈی ارائوں ، جناب پارسناتھ ارائوں ، جیسے دیگر کئی گائوں کے لوگوں کے گھر جاکر وزیر اعلیٰ بجلی کی حالت دیکھنے کے بعد ان کے مسائل سے روشناس ہوئے ۔ گائوں دورہ کے دوران چمپا پورکے لوگوں نے رنگولی بنا کر اور خواتین نے روایتی گیت گاکر وزیر اعلیٰ کا خیر مقدم کیا ۔
چمپا پورگائوں کا دورہ کر نے کے بعد پرائمری اسکول چمپا پور(دون)احاطہ میں لگی ایگریکلچر کے الات کے اسٹال کا جائزہ لیا ۔ اس دوران کھیتوں کی آبپاشی کے لیے مقامی کسانوں کے درمیان زراعتی فیڈر کا کنکشن تقسیم کر کے ایگریکلچر کے لیے الگ فیڈر منصوبہ کو وزیر اعلیٰ نے لانچ کیا ۔ اسٹال جائزہ کے دوران مستفیضوں کے درمیان وزیر اعلیٰ نے گرام پریوہن منصوبہ اور اسٹوڈنٹ کریڈٹ کار ڈ منصوبہ کے تحت ملنے والی فائدہ کی تقسیم کی ۔ ہنر مند نوجوان پروگرام کے تحت ٹریننگ مکمل کر چکے 4بچوں کو سرٹیفکیٹ اور ٹریننگ کے بعد 2لوگوں کو لرنر فیسلیٹر کے عہدہ پرہوئی بحالی کا بحالی لیٹر وزیر اعلیٰ نے دیا ۔ ضلع پروگرام دفتر (آئی سی ڈی ایس )مغربی چمپارن بتیا کے ذریعہ چلنے والے فروغ اطفال خدمات سے متعلق لگے اسٹال کا جائزہ لے کر آنگن باڑی میں پڑھنے والے بچوں کے درمیان پوشاک کی رقم تقسیم کی ۔ زراعتی سازو سامان سے متعلق لگے اسٹال کا معائنہ کے دوران سوائل ہیلتھ کارڈ منصوبہ ، فرٹیلائز اور سبسڈی کی شرح پر ملنے والے زراعتی سازوسامان سے متعلق انہوں نے پوری جانکاری لی۔ ضلع ہیلتھ کمیٹی مغربی چمپارن اور پرائمری ہیلتھ سینٹر کے ذریعہ لگے اسٹال کا بھی وزیر اعلیٰ نے معائنہ کیا ۔ ضلع انتظامیہ کے ذریعہ بگہا ضلع میں قائم درج فہرست ذات گرلس ہاسٹل اسکول ، کدماوا میں طلبا کے لیے فراہم بنیادی سہولتوں سے متعلق ڈیکو مینٹری فلم وزیر اعلیٰ کے سامنے پیش کی گئی ۔ اس کے بعد رگھیا گرام جاکر وزیر اعلیٰ بجلی سے متعلق عزم منصوبہ (سوبھاگیہ)کے تحت 10کیلو واٹ کے صلاحیت والے سولر پاور پلانٹ (آف گریڈ)کا وزیر اعلیٰ نے معائنہ کیا ۔ گرڈ کے معائنہ کے بعد رگھیا گرام کے رہنے والے جناب بھوپنارائن کے گھر جاکر وزیر اعلیٰ نے ہر گھر بجلی منصوبہ کا معائنہ کیا ۔میڈیا اہلکاروں سے بات کر تے ہوئے وزیر اعلیٰ نے کہا کہ 7عزائم منصوبہ کے تحت پورے بہار کے ہر خواہشمند کنبہ تک اس سال کے 31دسمبر تک ہم لوگوں نے بجلی مہیا کرانے کا نشانہ متعین کیا تھا جو متعینہ وقت سے دو ماہ قبل ہی 25اکتوبر کو پورا کر لیا گیا ہے
۔ انہوں نے کہا کہ پہاڑی ، جنگلی اور کچھ دیگر علاقوں میں آف گرڈ کے توسط سے لوگوں کے گھروں میں بجلی پہنچائی گئی ہے ۔ پہاڑی علاقوں کا جائزہ لینے کے بعد آج ہم یہاں پہنچے ہیں یہا سولر پاور پلانٹ لگانے کی ذمہ داری جنہیں دی گئی تھی وہ آئندہ پانچ برسوں تک اس کا مینٹننس کیساتھ ہی اس بارے میں آنے والے مسائل کا حل بھی کریں گے ۔
انہوں نے کہا کہ ایل ای ڈی بلب کا جو پروڈکٹ ہے اس کے بارے میں شکایت بھی آئی ہے کہ وہ جلد ہی فیوز ہو جارہا ہے لیکن یہ قومی سطح کا موضوع ہے ۔
وزیر اعلیٰ نے کہا کہ یہاں کا جائزہ اور دورہ کے بعد ہم نے دو مشورے دیے ہیں ۔پہلا یہ کہ لوگوں کے گھروںتک اور پاور کے توسط سے بجلی کی فراہمی کی جارہی ہے ایسے میں جب سورج نہیں نکلتا ہے تو فراہمی باضابطہ ہو سکے ، اس کے لیے اور پاور جنریشن کو بیٹری میں جمع کر نے کا انتظام ہو نا چاہئے ۔ اس کے علاوہ جو بجلی کے کھمبے لگے ہیں اس پر اسٹریٹ لائٹ لگے تاکہ گائوں کے ارد گرد اور گلیوں میں بھی روشنی کا انتظام رہے ۔ انہوں نے کہا کہ ایس سی ، ایس ٹی یا دیگر طبقوں کے جو بھی رہائشی اسکول ہیں یہاں سولر پاور پلانٹ لگانے کا ہم نے مشورہ دیا ہے ، تاکہ لوگوں میں اور پاور جو شمشی توانائی سے آتی ہے جو قابل تجدید توانائی ہے ۔اس کے تئیں بیداری ضروری ہے ۔
وزیر اعلیٰ نے کہا کہ گرڈ کے توسط سے جو بجلی پہنچائی جارہی ہے اسکا ایک متعینہ وقت کی مدت ہے کیونکہ کوئلہ پوری دنیا میں محدود ہے ۔ ہم چاہتے ہیںکہ پورے بہار میں سولر بجلی کا استعمال ہو ،جب تک سورج ہے تب تک کوئی دقت نہیں آنے والی ہے اور زمین تو سورج پر ہی منحصر ہے ۔ اس کے لیے ایک مہم چلاناچاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ پورے بہار میں آبپاشی کے لیے الگ ایگریکلچر فیڈر لگانے کا کام جاری ہے اور آج یہاں 5کسانوں کو آف گرڈ کے توسط سے آبپاشی کے لیے بجلی کا کنکشن مہیا کرا کر اس کی شروعات کر دی گئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جس طرح سے بہار کے ہر خواہشمند کنبہ کو بجلی کا کنکشن نشانہ کے مطابق مہیا کرایا گیاہے ۔ ٹھیک اسی طرح 31 دسمبر 2019تک ہر خواہشمند کسان کو آبپاشی کے لیے بجلی کا کنکشن مہیا کرانے کے ساتھ ہی پرانے خستہ حال بجلی کے تاروں کو بدلنے کا نشانہ متعین کیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جگہ جگہ جاکر دیکھنے سے یقین ہو تا ہے اور لوگوں کے مسائل سے بھی روشناس ہو نے کا موقع ملتا ہے اور اسی کے مطابق نئے منصوبے بنائے جاتے ہیں ۔ابھی کی ضرورت کو دیکھتے ہوئے یہاں سولر پلیٹ لگا ہوا ہے آئندہ اور زیادہ ضرورت پڑنے پر سولر پلیٹ لگائے جائیں گے ۔
بھتوجلہ گائوں کے پینے کے پانی کے مسئلہ سے متعلق ایک اخبار کے سوال پر وزیر اعلیٰ نے کہا کہ جب ہم ریل کے وزیر تھے ، اس وقت سیہی ہم اس سے آشنا ہیں اوریہ تشویش کات موشضوع ہے ، لیکن اس کا راست تعلق جنگلات اور ماحولیات سے ہے ، جس کے اپنے ضابطے اور قانون ہیں ۔ ہم اس کے حل کے لیے کو شش کریں گے ۔
وزیر اعلیٰ نے کہا کہ ماحولیات میں ہماری کافی دلچسپی ہے ۔ جنگلات میں زندگی بسر کر نے والوں کی ہر حال میں سیکورٹی ہو نی چاہئے ۔ اس نقطہ نظر سے بھی ہم یہاں آتے رہتے ہیں ۔ میڈیا اہلکاروں کے سوال پر وزیر اعلیٰ نے کہا کہ یہ کوئی سفر نہیں ، اسپاٹ وزٹ ہے ۔ الگ الگ اضلاع میں جو خاص چیزیں ہیں ،اسے دیکھنے جائیں گے اور جتنا ممکن ہو گا تخمینہ لگا کر اسکے مطابق چیزیں آگے بڑھائی جائیں گی ۔ گائوں کے لوگوں کے مطالبہ پر وزیر اعلیٰ نے اس علاقہ میں کمیونیکیشن ٹاور کی تعمیر کی بھی ہدایت دی ۔
اس موقع پر بجلی کے وزیر جناب وجندر پرساد یادو ، ممبر پارلیمنٹ جناب ستیش چندر دوبے ، ممبر اسمبلی محترمہ بھاگیرتھی دیوی ، ممبر اسمبلی جناب رنکو سنگھ ، ممبر قانون ساز کونسل جناب ستیش کمار ، چیف سیکریٹری جناب دیپک کمار ، بجلی محکمہ کے پرنسپل سیکریٹری جناب پرتے امرت ، وزیر اعلیٰ کے او ایس ڈی جناب گوپال سنگھ ، کمشنر ترہت جناب نرمدیشور لال ، بتیا ڈی ایم ، بتیا کے ایس پی ، بگہا ایس پی جناب اجئے کمانت سمیت دیگر کئی شخصیات ، بجلی محکمہ کے دیگر سینئر افسران اور بڑی تعداد میں مقامی لوگ موجود تھے ۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close