بہارپٹنہ

پٹنہ ہائی کورٹ سی بی آئی جانچ کی نگرانی کیلئے تیار،حکومت اور سی بی آئی سے رپورٹ طلب

پٹنہ:پٹنہ ہائی کورٹ نے ریاستی حکومت کی یہ درخواست منظور کرلی کہ وہ مظفر پور کے ایک شیلٹر ہوم میں لڑکیوں کی عصمت دری کے معاملے کی سی بی آئی جانچ کی نگرانی کرےگا۔چیف جسٹس راجندر مینن اور جسٹس راجیو رنجن پرساد پر مشتمل ڈویزن بنچ نے لڑکیوں کی عصمت دری کے معاملے کی سی بی آئی سے کرائی جانے والی جانچ کی نگرانی کرنے کی ریاستی حکومت کی درخواست منظور کرلی ہے۔ عدالت نے ملزمین کو حتی الامکان جلد سے جلد کم وقت میں سزا دینے کے لئے ایک فاسٹ ٹریک کورٹ قائم کرنے کی ریاستی حکومت کی درخواست بھی منظور کرلی ہے۔ ہائی کورٹ نےریاستی حکومت اور سی بی آئی کو اس سلسلے میں نوٹس بھیج کررپورٹ طلب کی ہے اور معاملے کی اگلی سماعت کی تاریخ دو ہفتہ بعدطے کی ہے۔محکمہ سماجی بہبود کی ہدایت پر ممبئی کے ٹاٹا انسٹی ٹیوٹ آف سوشل سائنسز نے مظفرپور میں بچیوں کے شیلٹر ہوم کو چلانے والی غیر سرکاری تنظیم سیو سنکلپ اور وکاس سمیتی کی سوشل آڈٹ کی تھی۔ ٹاٹا انسٹی ٹیوٹ نے اپنی رپورٹ اس سال 26مئی کو سونپی تھی ۔ اس رپورٹ میں ہی یہ انکشاف ہوا تھاکہ شیلٹر ہوم میں رہنے والی بچیوں کے ساتھ جنسی زیادتی ہوئی۔رپورٹ سونپے جانے کے تقریباً ایک ماہ کے بعد اس معاملے میں کارروائی کی گئی۔ میڈیکل جانچ میں 34 بچیوں کے ساتھ عصمت دری کی تصدیق ہوئی تھی ۔اس کے بعد شیلٹر ہوم سے 44بچیوں کو آزاد کرایا گیا ۔ آزادکرائی گئی بچیوں کو پٹنہ، مکامہ اور مدھوبنی کے شیلٹر ہوم میں بھیجا گیا تھا ۔اس معاملے میں شیلٹر ہوم کے مالک برجیش ٹھاکر سمیت دس لوگوں کو گرفتار کیا جاچکا ہے ۔ ریاستی حکومت نے اس معاملے کی سی بی آئی جانچ کی 26جولائی کو سفارش کی تھی۔اس معاملے کی جانچ فی الحال سی بی آئی کررہی ہے ۔ جانچ کی ذمہ داری سنبھال رہے سی بی آئی نے محکمہ سماجی بہبود سے شیلٹر ہوم سے متعلق تمام دستاویزات اپنے قبضے میں لے لئے ہیں۔ سی بی آئی نے سیل کئے گئے شیلٹر ہوم کے کمروں کی تلاشی لینے کے بعد متاثرہ بچیوں سے بھی معلومات حاصل کیں۔ سی بی آئی کے رڈار پر محکمہ سماج کے کئی افسران بھی ہیں۔دوسری طرف محکمہ سماجی بہبود نے ٹاٹا انسٹی ٹیوٹ کی رپورٹ پر کارروائی کرنے میں تاخیر کرنے کے الزام میں محکمہ کے معاون ڈائریکٹر دنیش کمار سمیت تیرہ افسران کو معطل کردیا ہے۔ اس معاملے میں مسٹر شرما نے ہی 31 مئی کو خواتین تھانہ میں ایف آئی آر درج کرائی تھی۔محکمہ نے معاون ڈائریکٹر مظفر پور دویش کمار شرما کے علاوہ معاون ڈائریکٹر بھوجپور آلوک رنجن ، معاون ڈائریکٹر بھاگل پورگیتانجلی پرساد، معاون ڈائریکٹر مدھوبنی ستیہ کام ، معاون ڈائریکٹر ارریہ گھنشیام روی داس اور معاون ڈائریکٹر مونگیر سیما کماری کو معطل کردیا ہے۔دیگر معطل افسران میں چائلڈ پروٹیکشن افسر پٹنہ نولیش کمار سنگھ، اس وقت کے چائلڈ پروٹیکشن افسر مونگیر امرجیت کمار، اس وقت کے چائلڈ پروٹیکشن افسر بھاگلپور رنجن کمار، چائلڈ پروٹیکشن افسرا گیا معراج الدین سمدانی ، اس وقت کے چائلڈ پروٹیکشن افسرمدھوبنی سنگیت کمار ٹھاکر، اس وقت کے چائلڈ پروٹیکشن افسر موتیہاری وکاس کمار اور سپرنٹنڈنٹ آف چائلڈ سپرویزن ارریہ محمد فیروز شامل ہیں۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close