بہارپٹنہ

پپو یادو نے مریضوں کے درمیان بانٹے ایک لاکھ روپے

پٹنہ:جن ادھیکارپارٹی (لو) کے قومی سرپرست و ایم پی راجیش رنجن عرف پپو یادو نے آج پی ایم سی ایچ میں’ ‘آپ کا سیوک، آپ کے دوار‘ پروگرام کے دوران ضرورت مندمریضوں کی فریاد سنی اور ان کوحل کرتے ہوئے اقتصادی مدد کے طور پر ایک لاکھ روپے بانٹے۔ اس موقع پر پی ایم سی ایچ کے سپرنٹنڈنٹ بھی موجود رہے۔بعد میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے ممبر پارلیمنٹ نے دنیا بھر میں بھارت کے صحت نظام کو بدترین بتایا۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے ملک کی حکومت کو سرکاری ہسپتال کی حالت بہتر بنانے میں کوئی دلچسپی نہیں رہ گئی ہے۔اس کی ایک مثال پی ایم سی ایچ ہے جہاں كبد انتظام کا بول بالا ہے۔
انہوں نے کہا کہ پی ایم سی ایچ کی حیثیت آج جہنم سے بھی بدتر ہو گئی ہے۔ یہاں نہ تو ادویات ملتی ہیں، نہ ہی جانچ صحیح سے ہوتی ہے۔ کم و بیش یہی حال بہار کے تقریبا تمام ہسپتالوں کا ہے، مگر نتیش کمار کو اس میں کوئی دلچسپی نہیں ہے۔ یہی وجہ ہے کہ اقتصادی تنگی کی مار اسپتال کے ساتھ ساتھ غریب لوگوں کو بھی جھیلنی پڑ رہی ہے۔ لہذا ہم وقت وقت پرآپ کا سیوک، آپ کے دوار پروگرام منعقد کرتے ہیں۔ اس سے غریب لوگوں کو اقتصادی مدد تو مل ہی جاتی ہے، ساتھ ہی ساتھ ادارے اور نظام کے ساتھ مل کر ہسپتال کی حالت سدھارنے کی بھی ہم کوشش کرتے ہیں۔انہوں نے نجی کلینک اور اسپتال پر بھی سوال کھڑے کئے اور کہا کہ جن ڈاکٹروں نے پرائیویٹ کلینک کھول رکھا ہے، وہ یہاں مریضوں کو دیکھنا ضروری نہیں سمجھتے۔ یہاں تک کہ ایمرجنسی میں بھی علاج ممکن نہیں ہو پاتا ہے۔ میرا شروع سے مطالبہ رہاہے کہ حکومت ملک بھر میں طبی ایکٹ نافذ کرے تاکہ طبی علاقے میں دلالی اور مافیاگری پر لگام لگ سکے۔ وہیںپی ایم سی ایچ کے سپرنٹنڈنٹ نے بتایا کہ ہسپتال میں سہولیات کا فقدان ہے۔ ہمارے پاس بستر کی توقع میں مریضوں کی تعدادزیادہ ہوتی ہے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close