شعر وشاعری

…چھ دسمبر یاد ہے…

حامداکملؔ گلبرگہ (کرناٹک)
مَیں ابھی بُھولا نہیں ہوں چھ دسمبر یاد ہے
مجھ کو اس یومِ سیہ کاہر ستمگر یاد ہے

کیا شہادت بابری مسجد کی بھولی جائے گی
یاد ہیں کٹتے گلے ، اک ایک خنجر یاد ہے

تو کہاں تھا اے اہنسا کے پچاری سچ بتا!
کیا تجھے ہمسائے کا جلتا ہو ا گھر یاد ہے

بابری مسجد کو سجدوں سے سجائیں گے ہمیں
بس خدا کے سامنے جھکتا ہے یہ سر یاد ہے

قومی تہذیب و شرافت عدل اور دستور بھی
جس میں سب ڈوبے ندامت کا سمندر یاد ہے

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close