دہلیہندوستان

ڈیجیٹل دور میں بھی کتابوں کی معنویت بر قرار: جاوڈیکر

فروغ انسانی وسائل کے وزیر نے پرگتی میدان میں 27 ویں عالمی کتاب میلے کا افتتاح کیا

نئی دہلی: مرکزی فروغ انسانی وسائل کے وزیر پرکاش جاوڈیکر نے ہفتہ کو پرگتی میدان میں 27 ویں عالمی کتاب میلے کا افتتاح کیا۔ ڈیجیٹل دور میں بھی انہوں نے کتابوں کی اہمیت اور معنویت کو تسلیم کیا۔انہوں کہا کہ کتابوں کی دنیا مختلف ہے ۔ لہذا میلے میں ہر سال لاکھوں کی تعداد میں کتابوں کے شائقین پہنچتے ہیں۔
جاوڈیکر نے اس موقع پر وزیر اعظم نریندر مودی کے ذریعہ لکھی کتاب ’اگزام واریئرس‘ کی کاپی مہمان خصوصی ملک شارجہ کے سرکاری محکمہ کے ایگزیکٹو چیئرمین شیخ فہیم بن سلطان القاسمی کو تحفے میں دی۔ میلے کی تھیم ’معذوروںکو پڑھنے کی ضرورت‘کے پیش نظر انہوں نے معذوروں کے لئے وقف ایک کیلنڈر اور بریل رسم الخط کی کتابوں کو ریلیز کیا۔ اس کے علاوہ جاوڈیکر نے بی بی فاطمہ ایند کنگز سنس کتاب کا بھی اجرا کیا۔
مرکزی وزیر پرکاش جاوڈیکر نے کہا کہ ڈیجیٹل میڈیم، کنڈل، ٹیلی ویژن اور آڈیو بکس کے باوجود شائع ہوئی کتابوں کو پڑھنے کی چاہت کم نہیں ہوتی۔ یہی بھارت کی ثقافت ہے۔ انہوں نے کہا کہ ترقی کے میدان کی تعمیر نو کے کام کے درمیان یہاں محدود جگہ میں کتاب میلے کا انعقاد کرنا خوشی کا باعث ہے۔ میلے میں 20 ملک اور 650 پبلیشر حصہ لے رہے ہیں۔ یہاں مختلف زبانوں کی کتابوں کے لئے 1350 اسٹال لگائے گئے ہیں۔ انہوں نے گزشتہ سال میلے میں کتاب سے محبت کرنے والوں کے اعداد و شمار کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ سال 12 لاکھ لوگ یہاں آئے تھے اور اس سال یہ ریکارڈ ٹوٹ جائے گا۔
شیخ فہیم بن سلطان القاسم نے کہا کہ بھارت اور شارجہ کے درمیان تعلیم، کاروبار، ثقافت سمیت تمام علاقوں میں دہائیوں پرانے تعلقات ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کتاب میلہ دانشوروں کے خیالات کو اشتراک کرنے کا پلیٹ فارم فراہم کرتا ہے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close