پٹنہ

ہائی ٹینشن تار کی زدمیں آنے سے دو لوگوں کی موت کے بعد پن پن میں ہنگامہ

پٹنہ: ہفتہ کی دیر رات ہائی ٹینشن تار کی زد میں آنے سے پن پن کے پکڑی محلے میں چار لوگ بری طرح سے جھلس گئے تھے جنہیں علاج کے لئے پی ایم سیایچ میں بھرتی کرایا گیا تھا ۔ اتوار کی صبح ان میں سے دو لوگوں کی موت کے بعد ناراض لوگوں نے بجلی محکمہ پر لا پر وائی برتنے کا الزام لگاتے ہوئے این ایچ 83 پر جام لگا دیا ۔ موقع پر پہنچی پولس نے انہیں سمجھا بجھا کرجام ہٹایا۔ اطلاع کے مطابق ہفتہ کیر ات میںتیز آندھیکی وجہ سے پن پن کی پکڑی محلے میں ہائی ٹینشن بجلی کی ایک تار ٹو ٹ کر نیچے گرگئی تھی ۔ اس کی زد میں آنے سے چار لوگ بری طرح سے جھلس گئے ۔ ان کو رات میں پی ایمسی ایچ میں داخل کرایا گیا تھا لیکن صبح ان میں سے دو لوگوں کی موت ہو گئی ۔ اس کے بعد پن پنمیں لوگوں نے ہنگامہ کرنا شروع کر دیا ۔ بڑی تعداد میں لوگوں این این 83کو جام کر دیا ۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ حادثہ بجلی محکمہ کی لا پر وائی کی وجہ سے ہوا ہے ۔ آندھی میں سڑک پر گرے ہوئے تار جبکہ آندھی کے بعد تمام اہم تاروں کے چیک کر کے ہی کرنٹ دینا چاہئے تھا لوگوں کو کہان تھاکہ علاقے کے تمام تار پرانے ہو گئے ہیں جنہیں بدلا جانا ضروری ہے ۔ موقع پر پہنچے بجلی محکمہ کے افسروں نے لوگوں کو یقینی دلایا ہے کہ بہت جلد ہی وہاں کے تاروں کی حالت ٹھیک کر دی جائے گی۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close