ہندوستان

مہاراشٹر حکومت کے خلاف انسانی حقوق کمیشن کا نوٹس جاری

بھیما کورے گاؤں معاملہ میں انسانی حقوق کارکنان کی گرفتاریوں کے خلاف قومی انسانی حقوق کمیشن نے مہاراشٹر حکومت کو نوٹس جاری کر دیا ہے۔ قومی انسانی حقوق کمیشن کے مطابق کارکنان کی گرفتاریوں کے دوران اصولوں پر عمل نہیں کیا گیا۔
بھیما کورے گاؤں معاملہ میں سماجی کارکنان کی گرفتاریوں کا معاملہ سپریم کورٹ پہنچ گیا ہے۔ گرفتاریوں کے خلاف پولس کارروائی کے ایک دن بعد سپریم کورٹ میں کئی افراد کی جانب سے عرضی داخل کی گئی ہے۔رومیلا تھاپر، پربھات پٹنایک، ستیش دیشپانڈے، مایا ڈارنل اور دیگران نے آج دہلی اور فریدآباد سے حراست میں لئے گئے گوتم نولکھا اور سدھا بھاردواج کی گرفتاریوں کے خلاف سپریم کورٹ میں عرضی داخل کی ہے۔ سپریم کورٹ اس معاملہ میں شام کے تقریباً 4 بجے سماعت کرے گا۔
دہلی سے گرفتار کئے گئے گوتم نولکھا کے معاملہ میں دہلی ہائی کورٹ میں دوپہر 2.15 بجے سنوائی ہوگی۔ دراصل اس معاملہ سے وابستہ دستاویزات کا مراٹھی سے انگریزی میں ترجمہ کرانے میں پولس کو وقت لگ رہا ہے۔ ترجمہ کئے گئے دستاویزات 12 بجے تک عدالت میں پیش کو کہا گیا ہے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close