بین الاقوامی

ہالینڈ میں گستاخانہ خاکوں کا مقابلہ منسوخ

ایمسٹرڈم:نیدرلینڈز میں انتہائی دائیں بازو کے قانون ساز گیرٹ وائلڈر نے قتل کی دھمکیوں اور دوسروں کی زندگیوں کو لاحق خطرات کے سبب پیغمبر اسلام کے خاکوں کا مقابلہ منسوخ کرنے کا اعلان کیا ہے۔گریٹ وائلڈر نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ ’اسلامی تشدد کے خطرات کے سبب میں نے فیصلہ کیا ہے کہ اب کارٹون بنانے کا مقابلہ نہیں ہو گا۔‘پیغبرِ اسلام کے خاکے بنانے کا یہ مقابلہ رواں سال نومبر میں نیدر لینڈ کی پارلیمان میں گریٹ وائلڈر کی سیاسی جماعت کے دفتر میں منعقد ہونا تھا۔خاکوں کا مقابلے کے انعقاد کے اعلان کے بعد پاکستان سمیت دنیا بھر میں شدید احتجاج کیا گیا تھا اور مذہبی جماعت تحریک لبیک پاکستان کا اس سلسلے میں لاہور سے اسلام آباد کی جانب احتجاجی لانگ مارچ شروع کیا تھا۔مقابلہ منسوخ کرنے کے اعلان کے بعد پاکستان تحریک لبیک کے سربراہ خادم حسین رضوی کی جانب سے ان کی جماعت کے لانگ مارچ ختم کرنے کی بھی ٹویٹ کی گئی۔پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے مقابلے کی منسوخی کو ’اخلاقی فتح‘ قرار دیا ہے اور انھوں نے کہا کہ اُمتِ مسلمہ کے تعاون سے وہ اس معاملے پر او آئی سی اور اقوام متحدہ میں بھرپور آواز اُٹھائیں گے۔نیدر لینڈز کے قانون ساز گریٹ وائلڈر نے جمعرات کو رات دیر گئے جاری کیے گئے بیان میں کہا ہے کہ ’اسلامی تشدد کے خطرات کے سبب اب کارٹون بنانے کا مقابلہ نہیں ہو گا۔‘وائلڈر کا کہنا ہے کہ وہ رواں سال نومبر میں ہونے والے اس مقابلے کے ذریعے دوسروں کو بھی خطرات سے دوچار نہیں کرنا چاہتے ہیں۔اسلام مخالف رجحانات رکھنے والے نیدر لینڈ کے قانون ساز کو اپنے نظریات کے سبب قتل کی دھمکیاں ملی ہیں اور انھیں خصوصی حفاظتی تحویل میں رہنا پڑتا ہے۔ پیغبرِ اسلام کے خاکے بنانے کا یہ مقابلہ ہالینڈ کی پارلیمان میں منعقد ہونا تھا۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close