سیاست

ہمت ہے تووزیراعظم مودی رافیل معاملے پربحث کرے:راہل

بیدر:صدر کانگریس راہل گاندھی نے کرناٹک کے بیدر میں عوامی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے پارٹی کی انتخابی مہم کا آغاز کردیا ۔پارٹی ذرائع کے مطابق گاندھی کو اے آئی سی سی کا صدر مقرر کئے جانے پر تہنیت پیش کی گئی ۔اس ریلی میں صدرکانگریس راہل گاندھی نے مرکز کی مودی حکومت پر شدید نکتہ چینی کرتے ہوئے کہا کہ وزیردفاع نے ملک سے جھوٹ بولا اور وزیراعظم نے وعدہ کیا تھا کہ دو کروڑ نوجوانوں کو روزگار فراہم کیاجائے گالیکن اس وعدہ کو بھی پورا نہیں کیا گیا۔انہوں نے کسانوں کے مسائل پر بھی مودی حکومت پر شدید نکتہ چینی کی ۔انہوں نے کہامودی ا ن سے آنکھ نہیں ملاسکتے ۔انہوں نے کہا کہ رافیل معاملت یو پی اے حکومت نے ایچ اے ایل کے ساتھ کی تھی ہم نے فرانس سے کہا تھا کہ ہم ٹکنالوجی کا استعمال کریں گے اور ہندوستان میں جیٹ تیار کریں گے اس کے ذریعہ لاکھوں ملازمتیں ایروناٹیکل انجینئرس کے لئے فراہم کی جاسکتی تھی تاہم تاہم مودی کے برسراقتدار آنے کے بعد اس معاملت کو مکمل طور پر بدل دیاگیا۔انہوں نے کہاکہ مودی ،ہندوستانیوں کے نہیں بلکہ صرف 10تا15صنعت کاروں کے ہی وزیراعظم ہیں کیونکہ مودی نے 2.5لاکھ کروڑ روپئے کے ان صنعت کاروں کے قرضہ جات معاف کئے ہیں جبکہ دوسری طرف ہندوستان کے عوام نوٹ بندی کے بعد طویل قطاروں میں ٹہرے رہے۔انہوں نے کہا کہ ملازمتیں دینے کا وعدہ وزیراعظم نے کیا تھا تاہم اب کہا جارہا ہے کہ پکوڑے بناو،انہوں نے وزیراعظم نریندر مودی کو چیلنج کیا کہ وہ رافیل معاملت پر کھلے عام مباحث کریں ۔انہوں نے تعجب کا اظہار کیا کہ وزیراعظم ، فرانس سے کی گئی معاملت کے پس پردہ حقیقت کے اظہار سے کیوں راہ فرار اختیار کر رہے ہیں ۔راہل نے رافیل کو سب سے بڑے رشوت خوری کے گھپلے سے تعبیر کیا تاکہ وزیراعظم کے دوست انل امبانی کو فائدہ پہنچایاجاسکے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close