کھیل

ہندستان کی 67 برسوں میں ایشیاڈ میں بہترین کارکردگی

جکارتہ: ہندستان نے 18 ویں ایشیائی کھیلوں میں مقابلوں کے آخری دن ہفتہ کو مکے باز امت پنگھل اور برج پیئر کی طلائی ، خواتین اسکواش ٹیم کے چاندی کا تمغہ اور مرد هاكي ٹیم کے کانسی کے ساتھ ایشیائی کھیلوں کے 67 برسوں کی تاریخ میں اپنی بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کر ڈالا۔
ہندستان نے 1951 میں نئی دہلی میں اپنی میزبانی میں ہوئے پہلے ایشیائی کھیلوں میں 15 طلائی، 16 چاندی اور 20 کانسی سمیت 51 تمغے جیتے تھے جو ان کھیلوں سے پہلے تک اس کی بہترین کارکردگی تھی۔ ہندستان نے جکارتہ-پالمبگ میں ہوئے 18 ویں ایشیائی کھیلوں میں 15 طلائی، 24 چاندی اور 30 کانسی سمیت کل 69 تمغے جیت کر 67 سال پہلے کی نئی دہلی کی کارکردگی کو پیچھے چھوڑ دیا۔ ہندستان نے اگرچہ اپنی بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کیا لیکن وہ میڈل ٹیبل میں آٹھویں نمبر پر ہی رہ گیا۔
ہندوستان کے پاس آٹھ سال پہلے گوانگزو ایشیائی كھیلون میں 1951 کو پیچھے چھوڑنے کا موقع آیا جب اس نے 14 طلائی، 17 چاندی اور 34 کانسی سمیت کل 65 تمغے جیتے تھے۔ کل تمغوں کے لحاظ سے یہ 65 تمغے ہندوستان کی بہترین کارکردگی تھی لیکن اس بار ہندستان اس سے کہیں آگے نکل چکا ہے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close