سیاست

یوپی اے حکومت کے وقت ہوئی نکسل حامیوں کی گرفتاری غلط تھی: چدمبرم

ناگپور:وزیراعظم کے قتل اور فساد پھیلانے کی سازش کے تحت نظر بند کئے گئے نکسلی حامیوں کے بچاؤ میں سابق مرکزی وزیر پی چدمبرم کود پڑے۔ یوپی اے کے دوراقتدار میں ہوئی نکسل حامیوں کی گرفتاریاں غلط تھیں۔ اس وقت کی حکومت نے غلط فیصلہ کیا تھا۔ ایسا تبصرہ کرتے ہوئے پی چدمبرم نے کانگریس کو کٹہرے میں کھڑاکیا ہے۔ ناگپور میں ہفتہ کو ہوئی پریس کانفرنس میں چدمبرم نے کہا کہ یوپی اے کے دوراقتدار میں پابندی یافتہ سی پی آئی ماووادی تنظیم سے تعلقات کے چلتے2007میں برابرا راو، ارون فریرا، اونان گونسلوس کو گرفتار کیا گیا تھا۔ اس وقت مرکز اور مہاراشٹر میں کانگریس کی حکومت تھی، لیکن ہماری حکومت کا وہ فیصلہ غلط تھا۔ اس وقت ان دانشوروں کے خلاف وافر ثبوت نہیں تھے۔ اس لئے اس وقت ہوئی گرفتاریاں غلط تھیں۔ مرکزی وزارت داخلہ تب ان کے پاس نہیں تھی۔اس لئے انہوں نے اس معاملے میں دخل نہیں دیا لیکن اگر وہ2007میں وزیرداخلہ ہوتے تو ان گرفتاریوں کو ضرورٹالتے۔ نکسل حامیوں کے خلاف گزشتہ ہفتے میں ہوئی کارروائی کو بھی چدمبرم نے غلط ٹھہرایا ہے۔ نظر بند رکھے گئے سبھی کے حقوق انسانی کارکن ہونے کا دعویٰ انہوں نے کیا۔ پی چدمبرم نے کہا کہ ملک میں سبھی کو اپنے خیال رکھنے کا حق ہے۔ اس میں دائیں بازو تو کوئی بائیں بازو کا ہوسکتا ہے لیکن یہ کوئی شخص براہ راست طور پر پرتشدد کارروائی میں ملوث نہیں ہوتا ہے، نہ ہی کسی کو تشدد کے لئے اکساتا ہے۔ صرف اپنے نظریہ کو پیش کرتا ہے تو اس پر ایسی دفعات لگانا کہاں تک صحیح ہے۔ مرکزی حکومت پر الزام عائد کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ گزشتہ چار سالوں میں ملک میں خوف کا ماحول ہے۔ حکومت کے خلاف بولنے والوں پر کارروائی کی جاتی ہے۔ گزشتہ دو سالوں میں ایسے واقعات میں بڑا اضافہ ہوا ہے۔ جمہوریت کے لئے یہ سنگین تشویش کا موضوع ہے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close