اتر پردیش

مین پوری کے قصبہ کراﺅلی میں گیس کالا بازاری کی تجارت زوروں پر

مین پوری10جولائی(حافظ محمد ذاکر )ضلع مین پوری کے قصبہ کراﺅلی میں گیس کالا بازاری کی تجارت کئی ماہ سے جاری تھی ،گزشتہ دنو اس کالا بازاری خبریں اخباروں میں بھی شائع ہوئی تھی ،قصبہ کی پولس اس خبر سے مستعد ہوئی اور آج کراﺅلی پولس نے ایک آٹو کو معہ سلینڈر کے گرفتار کیا ہے ۔ غیر قانونی طریقے سے شہر میں ہو رہی گیس رفلنگ کی شکایت مسلسل انتظامیہ سے کی جا رہی تھی، اسی بات کو سنجیدگی سے لیتے ہوئے پیر کی دوپہر مخبر کی اطلاع پر قصبہ ملاون واقع جی،ٹی روڈ سے 16 گیس سلےنڈر لاد کر قصبہ کراﺅلی فروخت کےلئے لاتے وقت مخبر کی اطلاع پر پولس نے معہ ٹیمپو وڈرائیو ر کو حراست میں لے لیا ، حراست میں لئے گئے ڈرائیور جگدیش ولد سونےلال رہائشی ہاڈی تھانہ سکیٹ نے بتایا مذکورہ سلےنڈر ملاون رہا ئشی کلو ولد رگھوویر کے یہاں سے لائے تھے او ر کراﺅلی ملکھان سنگھ انٹرکالج کے پاس پہنچا نے تھے ،ڈرائیور کی طرف سے بتائے گئے فون نمبروں کی جانچ پڑتال کی جا رہی ہے۔تکمیل انسپکٹر ایس کے سکسےنہ نے بتایا ضبط کئے گئے سلینڈروں کے نمبر نوٹ کرکے تحقیقات کی جائے گی کہ یہ سلےنڈر کس ایجنسی کے ہےں،تحقیقات کے بعد، غیر قانونی سلنڈر کی تجارت کر نے والوں کے خلاف کار روائی عمل میںلائی جائے گی۔قصبہ کراﺅلی میں ہو رہی غیرط قا نو نیگیس رفلنگ سے مسلسل حادثے ہوتے رہتے ہیں، اسکول گاڑیو ں میں غیرقانونی گیس سلنڈر سے بچوں کے لیے خطرہ بنا رہتا ہے۔ اس طرح کے واقعات کو روکنے کےلئے انتظامیہ نے اب سخت قدم اٹھا لیا ہے ،او زمینی طور پر کام بھی شروع کر دیا ہے ، ملکھان سنگھ انٹر کا لج کے پاس، گھرناج پور ، بکری منڈی، کنیا پاٹھ شالہ اسکول کے قر یب، گےلاناتھ پل ،مین پوری تراہا ، گھرور روڈ وغیرہ جگہوں پر کی جا رہی ہے ۔کس طرح ملتے ہیں اتنی بھاری مقدار میں گیس سلنڈر قصبہ کے باشندوں کا الزام ہے کہ صارفین کی طرف سے اپنے مو با ئل سے گیس بک کرا دیتے ہیں،اگر صارف کسی مجبوری کے تحت گیس نہیں لے پاتے ہیں ، تو آپریٹرز کی طرف سے اسی ترسیل کو غیر قانونی طور پر گیس تاجروں کو مزید قیمت لے کر فروخت کر دےتے ہیں ۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close